ترکی میں بغاوت کیس میں سابق فوجی جرنیلوں کو عمر قید کی سزائیں

انقرہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – این این آئی۔ 31 دسمبر2020ء) ترکی کی ایک عدالت نے بدھ 30 دسمبر کو سن 2016 میں بغاوت کی ناکام کوشش میں مبینہ کردار ادا کرنے والے بعض سابق فوجی جرنیلوں سمیت درجنوں افراد کو عمر قید کی سزائیں سنا دیں۔ترک میڈیاکے مطابق اس معاملے کا تعلق انقرہ میں بری فوج کے ہیڈ کوارٹر میں ہونے والے واقعات سے تھا، جس کی سماعت 2017 میں شروع ہوئی تھی۔
اس میں 132 ملزمان پر فرد جرم عائد کی گئی تھی۔ ان میں سے 92 افراد کو عمر قید کی سزا سنائی گئی ہے۔ ان میں کئی سابقہ بہت سینیئر فوجی افسران بھی شامل ہیں۔ ان میں سے 12 فوجیوں کی عمر قید کی سزا میں غیر معمولی سختی کر دی گئی ہے، جس کے تنیجے میں انہیں پیرول پر رہا نہیں کیا جا سکے گا۔ سن 2016 میں صدر رجب طیب ایردوآن کی حکومت کا تختہ الٹنے کے لیے بغاوت کی جو ناکام کوشش کی گئی تھی، اس میں 250 افراد ہلاک ہوئے تھے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.