درود پاک پڑھنے کی فضیلت

درود پاک پڑھنا اس کی کتنی فضیلت ہے۔ احادیث روشنی میں آپ کو بتانے لگیں ہیں؟ بہت ساری احادیث مبارکہ ہیں۔

حدیثوں کے خزانے موجود ہیں۔ جو آقا ﷺ کی ذات پر درود پاک پڑھتا ہے۔ نبی پاک ﷺ نےارشاد فرمایاکہ: قیامت کے دن لوگوںمیں سے میرے قریب وہ ہوگا جس نے دنیا میں مجھ پر درود پاک زیادہ پڑھا ہوگا۔ ایک اور حدیث پاک ہے نبی پاک ﷺنے فرمایا: جس نے مجھ پر ایک مرتبہ درود پاک بھیجا۔ اللہ تعالیٰ اس پر دس رحمتیں بھیجتا ہے اور اس کے نامہ اعمال میں د س نیکیاں لکھتا ہے۔ نبی پاک ﷺ کی کتنی پیار ی حدیثیں ہیں۔ کہ درجات بلند ہوتے ہیں۔ رحمتیں اللہ تعالیٰ بھیجتا ہے۔ گن اہ مٹا دیے جاتے ہیں۔ تینوں احادیثوں کی طرح ابو طلحہ رضی اللہ عنہ نے فرمایا: میں ایک دن دربار نبوت میں حاضر ہوا۔ میں نےاپنے آقاﷺ کو اتنا خوش اور ہشاش بشاش دیکھا ۔ میں نے ایسا کبھی نہیں دیکھے۔ میں نے سبب دریافت کیا۔

تو فرمایا: میں کیوں خوش اور ہشاش بشاش ہوں؟ کہ ابھی ابھی میرے پاس سے حضرت جبرائیل ؑ یہ پیغام دے کر گئے ہیں کہ اللہ تعالیٰ فرماتا ہے اے محبوب کیا آپ اس بات پر راضی نہیں ہیں۔ کہ آپ کا کوئی امتی آپ پر ایک مرتبہ درود پاک پڑھے ۔ میں اور اس کے فرشتے اس پر دس رحمتیں بھیجے ۔ میں اس کے دس گن اہ مٹا دوں۔ اس کے لیے دس نیکیاں لکھ دوں۔ جو ایک مرتبہ سلام پڑھے ۔ میں اس پرد س مرتبہ سلام بھیجو۔ لہٰذا آپ اپنی امت کو اس بات کی خوشخبری سنا دیں۔ اور ساتھ یہ بھی فرما دیں۔ کہ اے امت ! اب تمہاری مرضی تم درود پاک کم پڑھو۔ یا زیادہ پڑھو۔ اس لیے نبی پاک ﷺ کی ذات پر درود پاک کتنا پڑھنا چاہیے؟ اس حدیث سے آپ اندازہ لگا سکتے ہیں۔ حضرت ابی بن کعب رضی اللہ عنہ نے فرمایا : میں نے دربار نبوت میں عرض کیا یا رسول اللہ ﷺ میں آپ پر کثرت سے درود پاک پڑھتا ہوں۔ یا کثرت سے پڑھنا چاہتا ہوں۔ کتنا پڑھوں؟

فرمایا: تو جتنا چاہے پڑھ۔ عرض کی باقی اور وظائف میں سے چوتھا حصہ درود پاک پڑھ لیا کرو۔ فرمایا: جتنا تو چاہے تو پڑھ۔ اگر ا س سے بھی زیادہ کرے تو تیرے لیے بہتر ہے۔ میں نے عرض کیا کہ میرے آقا اگرزیادہ کرنے میں بہتری ہے۔ میں نصف درود پاک پڑھ دوں۔ آدھا حصہ درود پاک پڑھتاہوں۔ آدھا حصہ جو ہے اس کے اندر اور وظائف کرلیتا ہوں۔ فرمایا: تیری مرضی ۔ اگر تو اس سے بھی زیادہ کرے تو تیرے لیے بہتر ہے ۔ عرض کی میرے آقا دو تہائی درود پاک پڑھا کروں۔ فرمایا: تیری مرضی اگر تو اس سے بھی زیادہ پڑھے۔ تو تیرے لیے بہتر ہے۔ عرض کیا میں سار ا ہی درود پاک نہ پڑھ لیا کرو۔ نبی کریمﷺ نے فرمایا: اگر تو ایسا کرے تو تیرے سارے کام سنور جائیں گے۔ اور تیرے سب گن اہ بخش دیے جائیں گے۔ اس سے ہر کوئی اندازہ لگا سکتا ہے کہ نبی پاک ﷺ کو درود پاک کتنا پیار اہے؟ اورا للہ پاک اور اس کے محبوب کریم ﷺ کے نزدیک اس کی کتنی اہمیت ہے۔ نبی پاک ﷺ جلوہ افروز تھے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.