””صرف ایک ہفتے میں گردے کی پتھری سے نجات““

گردے کی پتھری آ ج کے دور میں عام پایا جانے والا مسئلہ بن چکا ہے۔یہ پتھری عام طور پر کیلشیم کی کنکروںجیسی ہوتی ہے

جو گردوں کے فعل میں خرابی کی وجہ سے ان میں جمع ہوتی رہتی ہے۔ پتھری طویل عرصے تک گردے کے کسی ایک حصے میں جمع رہ سکتی ہے لیکن جب یہ اپنی جگہ چھوڑتی ہے تو بے حد تکلیف کا سبب بنتی ہے۔ گردے سے خارج ہو کر یہ مثانے تک آتی ہے اور پیشاب کی نالی کے ذریعے خارج ہوتی ہے۔ یہ ایک سست اور طویل عمل ہے جس کے دوران مریض کو بے پناہ تکلیف کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

عموماً اس کا علاج آپریشن ہی بتایا جاتا ہے لیکن ماہرین کے مطابق کچھ قدرتی غذائیں بھی اس مسئلے کے حل کے لئے تیر بہدف نسخہ ہیں۔گردوں کی پتھری کے خاتمے کے لئے ایک ایسا ہی مفید نسخہ لیموں کے رس، زیتون کے تیل اور آب جو سے تیار کیا جاسکتاہے۔ لیموں پتھری کو تحلیل کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے، جو کی وجہ سے پیشاب کی نالی کا تناوکم ہو جاتا ہے، اور زیتون کا تیل اسے ضروری چکناہٹ فراہم کرتا ہے۔یہ نسخہ تیار کرنے کے لئے

زیتون کا تیل 100 ملی لیٹر، آب جو 100 ملی لیٹر، اور لیموں کا رس درکار ہو گا۔ ان تینوں چیزوں کو بہت اچھی طرح مکس کرلیں اور روزانہ صبح نہار منہ تقریباً 50 ملی لیٹر مقدار استعمال کریں۔ باقاعدگی سے استعمال کریں تو تقریباً 4 سے پانچ دن بعد پیشاب کی رنگت قدرے زیادہ پیلی محسوس ہونے لگے گی ، جس کا مطلب ہے کہ نسخہ کام کررہا ہے۔ عموماً تقریباً 8دن میں مسئلہ مکمل طور پر حل ہو جاتا ہے

سالوں سے پتھر کےلئے نیبو کا جوس اور زیتون کے تیل کا مرکب کرنے کے لئے استعمال کیا گیا ہے، لیکن یہ گردے کے پتھر میں بھی بہت مؤثر ہے. ایک کیلشیم بیس کے ساتھ پتھر کو توڑنے کے لئے نیبو کے جوس میں موجود سائٹک ایسڈ کام کرتا ہے اور اسے دوبارہ بنانا بھی روکتا ہے. یہ مرکب بنانے کے لئے، نیبو کا رس اور زیتون کے تیل کو مسابقتی رقم میں ڈال دیں اور ایک دن میں دو سے تین گنا کھائیں ملبوسیم، فاسفیٹس، کاربونیٹ اور

کیلشیم سے بنا گردے کی پتھروں کے علاج کے لئے واجبو ایک بہت اچھا اور مؤثر حل ہے. تربوز میں کافی مقدار میں پوٹاشیم شامل ہوتا ہے، جو صحت مند گردے کے لئے اہم عنصر ہے. پوٹاشیم میں پیشاب میں ایسڈ کی سطح کی بحالی کو برقرار رکھنے میں مدد ملتی ہے. پانی پوٹاشیم بھی ہوتا ہے، جو قدرتی طور پر جسم سے باہر نکالتا ہے

Sharing is caring!

Comments are closed.