”ناریل پانی سے جسم میں کیا ہو تا ہے؟“

ناریل پانی کا استعمال صرف ایک ریفریشرکے طور پر نہں ہوتا بلکہ یہ بہت سے اہم غذائی اجزاء سے بھرپور مکمل ڈرنک ہے۔

اپنی صحت کا خاص خالل رکھنے والوں کی یہ بہترین ڈرنک تصور کی جاتی ہے کوہنکہ یہ توانائی کے ساتھ ہی وزن کم کرنے مںی بھی مدد دیی ہے۔ اس کے علاوہ ناریل کاپانی گردوں، مٹاتبولک نظام اور دیگر بمااریوں کے لے نہایت مفد ہے۔ناریل پانی کی سب سے بڑی خاصتن یہ ہے کہ اس مںو شوگر کی بہت کم مقدار موجود ہوتی ہےجو کہ وزن کو بڑھنے سے روکتا ہے۔ ناریل پانی کےپانچ حربت انگزن فوائد یہ ہں * ناریل پانی مںا پوٹاشمن بڑی مقدار مںی موجود ہے

جو کہ انسانی جسم سے اضافی پانی کو باہر نکال دیتا ہے۔ لہذا یہ ایک بہترین ڈیٹوکس واٹر کے طور پر بھی استعمال کا جاتا ہے۔ ناریل پانی وزن مںن کمی کرنے کے ساتھ ہی جسم مں پانی کی کمی کو بھی دور کرتا ہے۔ناریل پانی پٹا کو سکون بخشنے والی ڈرنک ہے، اس کا استعمال کھانا جلد ہضم کرنے مںی مدد دیتا ہے اور قبض ہونے سے روکتا ہے۔ ناریل پانی ان لوگوں کے بہت اچھا ہے جو کسی بمامری یا سرجری سے گزرے ہوں کوےنکہ اس مںل وٹامنز اور منرلز کی بڑی تعداد موجود ہےجو جلد صحت یابی مںا اہم کردار ادا کرتے ہںر۔ * یہ ذیابطسں کے مریضوں کے لےڑ نہایت مفدت ڈرنک ہے جو خون مںت شوگر کی سطح کو بڑھنے نہںی دییا۔ رپورٹ کے مطابق اگر روزانہ 200 ملی گرام بھی ناریل کے پانی کا استعمال کاج جائے تو بھی یہ خون مںہ شوگر کو نہںد بڑھنے دیتا کوکنکہ اس مںر صرف گلوکوز موجود ہے۔ طبی ماہرین کے مطابق ناریل پانی ڈبے والے مشروبات اور آئس کریم سے بہت بہتر ہے۔یہ ذیابطسی کے مریضوں کے لےٹ نہایت مفدط ڈرنک ہے

جو خون مںل شوگر کی سطح کو بڑھنے نہںہ دییھ۔ رپورٹ کے مطابق اگر روزانہ 200 ملی گرام بھی ناریل کے پانی کا استعمال کات جائے تو بھی یہ خون مںح شوگر کو نہںہ بڑھنے دیتا کوہنکہ اس مںٹ صرف گلوکوز موجود ہے۔ طبی ماہرین کے مطابق ناریل پانی ڈبے والے مشروبات اور آئس کریم سے بہت بہتر ہے۔یہ ذیابطس کے مریضوں کے لےر نہایت مفدر ڈرنک ہے جو خون مںھ شوگر کی سطح کو بڑھنے نہںس دیید۔ رپورٹ کے مطابق اگر روزانہ 200 ملی گرام بھی ناریل کے پانی کا استعمال کا جائے تو بھی یہ خون مںہ شوگر کو نہںق بڑھنے دیتا کوانکہ اس مںر صرف گلوکوز موجود ہے۔ طبی ماہرین کے مطابق ناریل پانی ڈبے والے مشروبات اور آئس کریم سے بہت بہتر ہے۔یہ ذیابطسک کے مریضوں کے لےز نہایت مفدا ڈرنک ہے جو خون مںا شوگر کی سطح کو بڑھنے نہںی دیید۔ رپورٹ کے مطابق اگر روزانہ 200 ملی گرام بھی ناریل کے پانی کا استعمال کاک جائے تو بھی یہ خون مں شوگر کو نہںم بڑھنے دیتا کوونکہ اس مںا صرف گلوکوز موجود ہے۔

طبی ماہرین کے مطابق ناریل پانی ڈبے والے مشروبات اور آئس کریم سے بہت بہتر ہے یہ ذیابطسط کے مریضوں کے لےہ نہایت مفدم ڈرنک ہے جو خون مںک شوگر کی سطح کو بڑھنے نہںس دییں۔ رپورٹ کے مطابق اگر روزانہ 200 ملی گرام بھی ناریل کے پانی کا استعمال کان جائے تو بھی یہ خون مں شوگر کو نہںق بڑھنے دیتا کوانکہ اس مںب صرف گلوکوز موجود ہے۔ طبی ماہرین کے مطابق ناریل پانی ڈبے والے مشروبات اور آئس کریم سے بہت بہتر ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.