مخصوص تعداد میںیا’’ اللہ ، یا سلام ‘‘ پڑھتا ہوں ، ہر دعا فوری قبول ہوتی ہے

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ) مخصوص تعداد میںیا’’ اللہ ، یا سلام ‘‘ پڑھتا ہوں ، ہر دعا فوری قبول ہوتی ہے

۔۔۔یہ وظیفہ ان لوگوں کے لیے ہے جو چاہتے ہیں کہ ان کو ہرمقصد میں کامیابی ملے ، کامیابی ان کا مقدر بن جائے۔ وہ جو بھی دعا مانگیں اللہ تعالیٰ ان کی دعا کو فوراً قبول شرفیت کا اعزاز اد ا کرے ۔ وہ لو گ اس وظیفے کو روزانہ نماز عصر کے بعد ایک سو اکیس مرتبہ پڑھیں۔ یعنی ” یا اللہ ، یا سلام ” ان دونوں اسمائے اعظم کو اکٹھا پڑھ کر ایک تصور کرنا ہے۔ اور اسی ترتیب سے اور اسی طریقہ کار سے آپ نے ایک سے اکیس مرتبہ اللہ تعالیٰ کے ان دونوں ناموں کو پڑھناہے۔ اول وآخر آپ نے گیارہ گیارہ بار درود پاک پڑھ کر بارگاہ الہیٰ میں خصوصی دعا کرنی ہے۔ انشاءاللہ! بفضل خدا اللہ تعالی آپ پر جب اپنی رحمت کی بارش برسائے گا۔ توآپ کو سمجھ نہیں آئے گی۔ کہ کامیابیاں آپ کو مل کہاں سے رہی ہیں؟ اس لیے جب بھی آپ نے کوئی کام کرنا شرو ع ہو تو آپ نے اللہ کے ان ناموں سے شروع کرنا ہے۔

اللہ پاک کو جب آپ نے پکارنا ہے۔ تو اللہ پاک آپ کی ہر دعا کو ضرور سنے گا۔ دوسرے نمبر پر یہ وظیفہ ان لوگوں کے لیے ہے جو بیمار ہیں۔ بیماری کی وجہ سے پریشان ہیں۔ پیسے پیسے لگا لگا کر تھک چکے ہیں۔ لیکن انہیں آرام کسی صورت میں نہیں آرہا۔ تو وہ لوگ اس وظیفے کو لازمی کریں۔ کرنا آپ نے یہ ہے کہ آپ نے ایک گلا س پانی اپنے پاس رکھ لینا ہے۔ آپ کسی بوتل میں بھی پانی لے سکتے ہیں ۔ کسی جگ میں بھی پانی لے سکتے ہیں۔ کرنا آپ نے یہ ہے کہ اس پانی پر ایک ہزار مرتبہ ” یا اللہ ، یاسلام ” کا ورد کرناہے۔ اول وآخر گیارہ گیارہ مرتبہ درود پاک پڑھ کر بارگاہ الہیٰ میں دعا کرنی ہے۔ اور پانی پر دم کردینا ہے۔ اور جب بھی مریض کو پانی دینے کی طلب محسوس ہو تو آپ نے یہی پانی مریض کو پلانا ہے۔ چاہیے کھانے کے ساتھ پانی دیں۔ اگر آپ نے میڈیسن دینی ہے

تو پھر بھی یہی میڈیسن دینی ہے۔ بہتر یہ ہے کہ آپ مریض کے لیے جو بھی کھانا بنائیں اس کھانے میں بھی اس میں تھوڑا سا پانی شامل کر لیں۔ جو چاہتے ہیں کہ چوریوں ، یا آسمانی یا زمینی بلاؤں سے محفوظ رہیں ۔ تو وہ لو گ اس وظیفے کو سونے سے پہلے یا نماز عشاء کے بعد ایک سو مرتبہ ضرور پڑھیں۔ اول وآخر درود پاک پڑھ کر بارگاہ الہیٰ میں دعا کریں۔ یا د رکھیں ! جب آپ نے وظیفہ کرنا بیٹھنے ہے۔ توآپ نے کسی سے بلاوجہ گفتگو نہیں کرنی ہے۔ تنہائی میں بیٹھ کر آپ نے اس وظیفے کو کرنا ہے۔ اگر آپ کے پاس دوسرے گھر والے ہیں۔

تو آپ نے ان کی باتوں پر توجہ نہیں دینی ۔ بلکہ دھیان اپنے وظیفے کی طرف رکھنا ہے۔ جس مقصد اور کامیابی کے لیے وظیفے کو کررہے ہیں۔ اس مقصد کو آپ نے وظیفے کے دوران میں اپنے ذہن میں رکھنا ہے۔اور اللہ تعالیٰ سے دعا کرنی ہے۔ مولا! اس وظیفے کو میں نے خالص تیری رضا کےلیے کیا ہے۔ اپنی رضا میں مجھے راضی فرما۔ جس مقصد کے لیے اس وظیفے کو کررہا ہوں۔ اس مقصد میں مجھےکامیابی عطا فرما۔ جو لوگ پریشان ہیں۔ وہ پریشانی سے نجات پانے کے لیے اللہ تعالیٰ سے دعا کریں۔ جو بھی بیماری میں مبتلا ہیں ۔ تو بیماریوں سے محفوظ رہنے کےلیے اللہ تعالیٰ سے خصو صی دعا کریں۔

Sharing is caring!

Comments are closed.