حضورپاک ﷺ کو سجدہ کے لیے صحابی رسول کی درخواست

صحابی رسول حضرت معاذ بن جبل رضی اللہ عنہ ، یمن گئے وہاں پر انہوں نے دیکھا کہ نصاریٰ اپنے بزرگوں کو سجدہ کررہے ہیں انہوں نے ان سے کہا کہ تم ایسا کیوں کرتے ہو۔؟

نصاریٰ نے حضرت معاذ بن جبل رضی اللہ عنہ ، سے کہا ہم سے پہلے نبیوں کے سلام کرنے کا یہی طریقہ تھا۔ جب حضرت معاذ بن جبل رضی اللہ عنہ ، آقا دو عالم حضرت محمد ﷺ کی بارگاہ اقدس میں حاضر ہوئے تو انہوں نے سرکار دو عالم ﷺ سے اس واقعہ کا ذکر کیا اور عرض کی یا رسول اللہ ﷺ کیا ہم آپ کو بھی سجدہ کرسکتے ہیں؟

حضور پاکﷺ نے فر ما یا نہیں ان لوگوں نے جس طرح اپنی کتابوں میں تحریف کی ہے ۔ اسی طرح اپنے نبیوں پر تہمت لگائی ہے اگر کسی انسان کو سجدہ کرنا روا ہوتا تو میں عورت کو کہتا کہ وہ اپنے خاوند کو سجدہ کرے۔ اللہ تعالیٰ نے ہم کو اس سے بہتر سلام کا طریقہ تعلیم فر مایا ہے۔

یہ ایک دوسرے کو السلام علیکم کہنا جو اہل جنت کا طریقہ ہے۔ حضرت کعب رضی اللہ عنہ ، کےکی حدیث میں ہے ستر ہزار فرشتے صبح اور ستر ہزار فرشتے رات کو روضہ انور پر حاضر ہوتے ہیں اور برکت کے لیے اپنے پروں کوروضہ انور کے ساتھ مس کرتے ہیں۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *