”سورت الحشر پہاڑ بھی نہ ٹھہر سکے آپ کے سامنے“

آج آپ کے لیے بہت خاص وظائف لے کرآئے ہیں۔

آج ” حسبنااللہ ونعم الوکیل ” اور رب کریم کی صفاتی نام ” یا عزیز” اور سورت ا لحشر کی آخری آیات کے حوالے سے بڑے خاص وظائف آ پ کو بتائیں گے۔ اور آج کے زمانےمیں جو بھی مسائل ہیں۔ چاہے وہ معاشرتی ہوں۔ چاہے وہ معاشی ہوں۔ گھر کے مسائل ہوں ۔ بیماریاں ہوں۔ انشاءاللہ! ر ب کریم ان وظائف کے صدقے اگر آپ صدقے دل کے ساتھ پڑھیں گے ۔ تو رب کریم بے تحاشہ اجر وثواب بھی عطا فرمائیں گے۔ آپ کی دعائیں بھی قبول ہوں گی۔ انشاءاللہ! آپ کی پریشانیوں اور تکلیفوں کا خاتمہ ہوگا۔ اور قضائے حاجات کے حوالےسے اور حاجت روائی کےلیے اور مشکلات کے حل کے لیے یہ وظائف بڑے خاص ہیں۔

آپ کو وظائف کے بارے میں بتاتے ہیں۔ سب سےپہلے آپ نے ہر قسم کی شر وفتنہ سے حفاظت کے لیے ، تکالیف سے حفاظت کے لیے ، دشمن سے محفوظ رہنےکےلیے ، آفات وبلات سےمحفوظ رہنے کےلیے ، حصول مقاصد کی کامیابی کےلیے “حسبنا اللہ ونعم الوکیل ” کو لازمی طور پر روزانہ کی بنیاد پر پانچ سو مرتبہ پڑھنا ہے۔ عمل کے شروع میں گیارہ مرتبہ اور آخر میں بھی گیارہ مرتبہ درود پاک پڑھیں۔ یہ عمل نماز عشاء کے بعد کریں۔ا ور مسلسل پابندی کے ساتھ کریں۔ اگر ایک ہی نشست میں اور ایک مجلس میں آپ پانچ سو مرتبہ نہیں پڑھ سکتے ۔ تو ایک تسبیح ” حسبنا اللہ ونعم الوکیل ” پڑھیں۔ لیکن آپ نے ناغہ نہیں کرنا ہے۔ انشاءاللہ ! جو ہرقسم کا شور وفتنہ ہے تکلیف ہے ۔

آفت ہے رب کریم ا س کوختم فرمائیں گے۔ مقاصد میں کامیابی کےلیے اگر آپ کوئی خاص مقصد رکھتے ہیں۔ خاص حاجت رکھتے ہیں۔ تو آپ نے اس میں کامیابی حاصل کرنے کےلیے اپنے کام سے رکاوٹوں کو ہٹانے کےلیے رب کریم کے صفاتی نام ” یاعزیز ” کو کثرت کےساتھ پڑھنا ہے۔ جتنا ہوسکے بغیر کسی تعداد کے پڑھیں۔ کوئی مقررہ وقت کی قید نہیں ہے۔ آپ زیادہ سے زیادہ پڑھیں۔ کم سے کم سومرتبہ لازمی پڑھنا ہے۔یعنی دن میں سومرتبہ ” یا عزیز ” لازمی پڑھیں۔ انشاءاللہ! آپ کو آپ کے ہر مقصد میں کامیابی حاصل ہوگی۔ اور رب کریم آ پ کو سرخروئی عطافرمائیں گے۔ سور ت الحشر کا تیسرا رکوع آیت نمبر اٹھارہ سے لے کر سورت کی آخر تک یعنی آیت نمبر چوبیس تک آپ نے یہ آیات بینات پڑھنی ہیں۔ ان کاعمل کرنا ہے۔ تمام مصیبتوں سے نجات کے لیے ، پریشانیوں سے ، تکالیف سے نجات کےلیے ، حاجت روائی کےلیے یہ عمل بڑا خاص ہے ۔

انشاءاللہ! اس عمل کی برکت سے اللہ تعالیٰ آپ کو بہت کچھ عطافرمائیں گے۔ تو پارہ نمبر اٹھائیس سورت الحشر تیسرا رکوع آیت اٹھارہ سے لے کر آپ نے سورت کے آخر تک یعنی آیت نمبر چوبیس اس طرح پڑھنی ہے۔ کہ اول وآخر آپ نے گیارہ گیارہ مرتبہ درود پاک پڑھنا ہے۔ پھر ” اوعوذ باللہ من الشیطان الرجیم ” اس کو مکمل پڑھیں ۔ اور ” بسم اللہ الرحمن الرحیم ” بھی مکمل پڑھیں۔ اور اس کے ساتھ تیسرا رکوع یعنی آیت نمبر اٹھارہ سے سورت الحشر کو پڑھنا شروع کردیں۔ جب آپ آیت نمبر اکیس “لو انزلناھذا القران علی جبل لرایتہ خاشعا متصد عا من خشیۃ اللہ”پر پہنچیں ۔یعنی ان الفاظ پر پہنچیں تو آپ نے ان الفا ظ پر رک جانا ہے۔ جب آپ اس آیت کریمہ یعنی آیت کریمہ اکیس کو پڑھیں۔

آپ کو شش کریں کہ آپ کے سامنے ترجمے والا قرآن ہو۔ تاکہ آپ ساتھ ساتھ اس کے ترجمے کو پڑھ بھی سکیں۔ اور محسوس بھی کریں۔ اورآپ کو سمجھ لگے ۔ کہ آپ کیا پڑھ رہے ہیں۔ جب آپ اس آیت مبارکہ کو پڑھین۔ تو آپ نے اپنی مصیبت کا تصورکرنا ہے۔ اور انتہائی خلوص سے آپ نے رب کریم کے حضور التجاء کرنی ہے۔ یا اللہ! میری مشکل یا مصیبت میرے لیے پہاڑ ہے۔ تو اپنی قدر ت سے قرآن کریم کی اس تلاوت کے صدقے اس پہاڑ کو میرے لیے ریزہ ریزہ فرمادیں۔ یہ دعا کریں۔ دعا کرنے کے بعدآپ نے آگے پڑھنا جاری رکھنا ہے۔ اور اگلی آیت جو چوبیس اور آخری آیت ہے۔ وہاں تک پڑھیں ۔ اور پھر آپ نے اس کے بعد رب کریم سے صدقے دل کے ساتھ دعا مانگنی ہے۔ یہ عمل آپ بار بار دہرائیں۔ آپ نے ایک مرتبہ نہیں پڑھنا ۔ جتنا وقت ہے بار بار دہرائیں۔ انشاءاللہ! اللہ تعالیٰ آپ کی تمام مشکلات اور تکالیف کو ختم کرے گا۔

Sharing is caring!

Comments are closed.