”شادی کی بندش جڑ سے ختم کر نے کا زبردست وظیفہ“

آج کا جو ہمارا وظیفہ ہے یہ بہت بہترین ہے شادی کی راہ میں کسی بھی رکا وٹ کو انشاء اللہ تعالیٰ یہ ختم کر دے گا۔

اور اگر کسی بچی اور بچے کی شادی میں بندش ہے یا جو بھی مسئلہ مسائل ہے جو بھی کسی نے حسد کی وجہ سے کوئی تعویذ کرائے ہیں یا کسی کی وجہ سے کوئی بندش لگا ئی ہے۔

تو جس طرح میں آپ کو بیان کر وں گا آپ نے اسی طرح پڑ ھنا ہےا ور اسی طرح عمل کر نا ہے تو انشاء اللہ بہت جلد شادی بھی ہو جائے گی اور جو بھی اس میں رکاوٹ ہو گی تو انشاء اللہ اللہ کے حکم سے ضرور ختم ہو گی آپ کا کام پہلے ہو جائے گا لیکن آپ نے اس وظیفے کو درمیان میں نہیں چھوڑ نا آپ نے اسے مکمل کر نا ہے جیسے میں آپ کو بتاؤں گا۔

تو ساری زندگی آپ کی کوئی بھی مشکل پریشانی اس قسم کی آپ پر نہیں آئے گی۔ اس وظیفے کو کرنے میں بہت زیادہ ٹائم نہیں لگے گا۔ تھوڑا سا ٹائم ہو گا اور اگر کوئی بھی شخص اپنے لیے ٹائم نہ نکال سکے اور تھوڑی سی محنت نہ کر سکے تو اس کی مرضی ۔ اس وظیفے کی برکت اور طاقت اتنی ہے کہ آپ سوچ بھی نہیں سکتے۔

بہت ساری میری مائیں بہنیں باہر جاتی ہیں پیر و فقیروں کے پاس دعائیں کر واتی ہیں پیسے بھی خرچ کرتی ہیں اگر یہ والا وظیفہ کر لیتے ہیں تو کسی کے پاس جانے کی ضرورت نہیں پڑ ے گی اور جو آپ چاہتے ہیں ویسے انشاء اللہ رشتہ عطا کرے گی اللہ کی ذات یہ آیت الکرسی کا وظیفہ تو ویسے ہر قسم کی پریشانی کے لیے لیکن آج کا جو وظیفہ ہے وہ بچے اور بچوں کی شادی میں رکا وٹ کا وظیفہ ہے ۔

کچھ رشتوں میں اللہ کی طرف سے دیر ہوتی ہے اور کچھ رشتوں میں بہت سے مسئلے مسائل ہو جاتے ہیں جیسا کہ حسد کی وجہ سے رشتے نہیں ہو پاتے۔ ہمارے حسد کرنے والے دوست احباب یا کوئی بھی وہ بندش لگا دیتے ہیں حالانکہ یہ انتہائی غلط ہے بندش جو ہے وہ کا لے علم سے لگتی ہے

اور کا لا علم کر نے والا اور کروانے والا دونوں جہنمی ہیں کیو نکہ رشتوں میں رکاوٹ ڈالنے کا مقصد یہی ہے کہ آپ کو پریشان کر نا آپ کا رشتہ نہ ہو۔ تو اگر رکاوٹ ہو گی بندش ہوگی یا تعویذ ڈالے ہوں گے تو اس کی وجہ سے یاتو پھر رشتے نہیں آئیں گے اور اگر کوئی آ ئے گا بھی تو اس کا جواب جو ہے وہ ہاں میں نہیں ہوگا۔

ہمارے علاوہ بھی اللہ تعالیٰ نے بہت ساری مخلوقات پیدا کی ہیں کچھ اچھی ہیں کچھ بر ی ہیں۔ اور جو کوئی رشتوں میں رکاوٹ ڈالتا ہے وہ کالے علم سے ڈالتا ہے ۔ تو وہ جو کالے علم کی مخلوقات جو طاقتیں ہوتی ہیں وہ یا تو رشتہ آ نے نہیں آ نے دیتیں یا جو رشتے آ تے ہیں ان کو آپ میں بہت سارے نقص نظر آتے ہیں اور رشتہ نہیں ہو پا تا۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *