عورتوں میں موٹاپے کی 4 پوشیدہ وجوہات

آج آپ کو عورتوں میں موٹاپا زیادہ آجانے کی پوشیدہ وجوہات کے بارے میں بتائیں گے۔ ہمارے ہاں عموماً یہ خیال کیا جاتا ہے

جو خواتین زیادہ کھاتی ہیں۔ وہی زیادہ موٹی ہوتی ہیں۔ جو کم کھاتی ہیں۔ وہ زیادہ موٹی نہیں ہوتیں۔ بلکہ ایسا بالکل بھی نہیں ہوتا۔ ایسی بہت سی خواتین ہیں۔ جو بہت کم کھاتی ہیں۔ لیکن اس کے باوجود وہ موٹاپے کا شکار ہیں۔ موٹاپےکی عمومی وجوہات تو ہم سب لوگ جانتے ہیں۔ جیسے چکنائی والی زیادہ چیزوں کا استعمال ، کھانے میں بے احتیاطی، فاسٹ فوڈ ز اور جنک فوڈز کا زیادہ استعمال ،

کولڈ ڈرنک اور میٹھی چیزوں کا بے دریغ استعمال وغیرہ ۔ لیکن خواتین میں موٹاپے کی اہم وجہ ہارمونز کا ڈسٹرب ہوجانا ہوتا ہے۔ عور ت اپنی زندگی میں مختلف مراحل سے گزرتی ہے۔ جس سے ہارمونز ڈسٹرب ہوجاتے ہیں۔ اور وہ موٹی ہوجاتی ہے۔ اس کے علاوہ کچھ ادویات بھی ایسی ہوتی ہیں۔ جو موٹاپا کا باعث بنتی ہیں۔ جیسا مانع حمل گولیاں یا اینٹی ڈپریشن ادویات ان سے بھی وزن بڑھتا ہے۔ بچوں کی پیدائش کے بعد بہت سی خواتین موٹاپے کا شکار ہوجاتی ہیں۔ اس کے علاوہ تھائی رائیڈ بھی موٹاپے میں اضافہ کا باعث بنتا ہے۔ اگر آپ کا وزن بغیر کسی وجہ کے بڑھ رہا ہے

تو آپ کو اپنا تھائی رائیڈ ٹیسٹ لازمی کروانا چاہیے۔ بہت سی خواتین نیند نہ پوری ہونے کی وجہ سے موٹاپا کا شکار ہوجاتی ہیں۔ اس کے علاوہ اگر توانائی میں عدم توازن ہے تو پھر بھی آپ موٹاپے کا شکار ہوسکتی ہیں۔ توانائی میں عدم توازن یہ ہے کہ جو غذا ہم کھاتے ہیں۔ کھانا کھانے کےبعدکام کاج یا واک نہ کرنےکی صورت میں توانائی کم خارج کرتے ہیں۔ ا س کو توانائی کا عدم توازن کہیں گے۔ اگر آپ توانائی زیادہ خرچ کریں گے ۔ واک کریں گے ۔ یا گھر کاکام کاج کریں گے ۔ تو اس سے آپ کاوزن کم ہونا شروع ہوجائےگا۔ موٹاپا ہونےمیں ہمارے ماحول کا بھی بہت بڑا ہاتھ ہے۔ جیسے تنگ جگہوں پر رہنا۔ معیاری کھانا نہ کھانا ، یا پھر آئل یا گھی کا زیادہ استعمال کرنا۔ یہ چند پوشیدہ وجوہات تھیں۔ جو خواتین میں پائی جاتی ہیں۔

Sharing is caring!

Comments are closed.