”پوٹاشیم والی غذائیں ، پوٹاشیم کا خزانہ“

آج ہم پوٹاشیم والی غذاؤں کے بارے میں بات کریں گے۔ پوٹاشیم ہمارے جسم کے لیے بہت ہی ضروری ہوتا ہے۔

یہ جسم میں ہونے والے درد ، پٹھوں میں اکڑاؤ ، کمزوری او ر دل کی دھڑکن کو کنٹرول کرتا ہے۔ اورہمارے بلڈ کو بھی نارمل رکھتا ہے۔ ہمارے جسم کو دن بھر میں سنتالیس سوملی گرام پوٹاشیم کی ضرورت ہوتی ہے ۔ جو ہماری باڈی میں جاکر کیمیکل ری ایکشن کرکے ہماری صحت کو بہتر بناتا ہے۔ لیکن ہم اپنی روزمرہ کی ڈائیٹ کے ذریعے پوٹاشیم کی درکارضرورت کو پورا نہیں کرپاتے۔آج آپ کو ایسی غذاؤں پر بات کریں گے۔ جن میں بھر پور پوٹاشیم ہوتا ہے۔ ہمیں یہ غذائیں ضرور کھانی چاہیں۔ تاکہ ہمارے جسم میں کبھی بھی پوٹاشیم کی کمی نہ ہو۔ کیلا: کیلا ایک بہت ہی اچھی ڈائیٹ ہے

اور سب سے آسان ناشتہ بھی ہے سوگرام کیلے میں تین سو اٹھاون ملی گرام پوٹاشیم ہوتا ہے۔ا ورکیلے میں پر وبائیوٹک کا خزانہ بھی ہوتا ہے۔ کیلے میں امائنو ایسڈز اور وٹامنز کا بہت اچھا کمبی نیشن ہوتا ہے ۔ جو دل کے مریضوں کے لیے بہت فائدہ مند ہوتا ہے۔ اس کے علاوہ یہ پھل آپ کے موڈ کو بہت اچھا کردیتا ہے۔ اگرآپ سٹریس اور ڈپریشن میں ہیں تو یہ پھل آپ کے موڈ کو خوشگوار کردیتا ہے۔ پوٹاشیم کی روزمرہ ضرورت کو پورا کرنے کے لیے آپ کیلے ضرور کھایا کریں۔ آپ اور آپ کا دل دونوں ہی صحتمند رہیں گے۔ پمپکن سیڈز یعنی کدو کے بیج: کد و کے بیجوں میں پوٹاشیم او رزنک بھرپور مقدار میں ہوتا ہے۔ سو گرام میں کدو کے بیج میں نو سو انیس ملی گرام پوٹاشیم ہوتا ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ ا س کے ایک ایک بیج میں بھرپور پوٹاشیم ہوتا ہے۔ یہ بیج بلڈ شوگر لیول کو نارمل رکھتے ہیں۔

ا ور اس میں موجود اینٹی آکسیڈینٹس آپ کو کینسر سے بھی بچا کررکھتےہیں۔ بادام : بادام بہت اچھی اور ہیلتھی ڈائیٹ ہے۔ صر ف ایک اونس بادم میں دو سو چھ ملی گرام پوٹاشیم پایاجاتا ہے۔ اس کے علاوہ بادام میں گڈ فیٹ، فائبرز، پروٹین ، میگنیشیم اور بھرپور وٹامن ای بھی ہوتا ہے۔ بادام اگر رات بھر پانی میں بھگو کر کھاتے ہیں ۔آپ کو بہت زیادہ فائدہ ہوتا ہے ۔ آپ کے کچن میں بادام روغن یا بادام ضرور ہونے چاہیں۔ جو آپ دودھ میں ڈال کر روزانہ پیا کریں۔ پالک: پالک بہت سے ریسٹورینٹ ایک عام سی ڈش ہوتی ہے۔ کیونکہ اس میں بہت کم غذائیت ہوتی ہے۔ لیکن ابلے ہوئے پالک کے ایک کپ میں ایک سو ستاسٹھ ملی گرام پوٹاشیم ہوتا ہے۔ پالک میں ناقابل یقین اینٹی انفلا مینٹری خصوصیات ہوتے ہیں۔ جو آپ کی آنکھوں اور ہڈیوں کی صحت کے لیے مفید ہوتے ہیں ۔ پالک میں موجود اینٹی آکسیڈینٹس بھی آپ کو کینسر سے بھی محفوظ رکھتے ہیں۔ کاجو: کاجو ایک بہت اچھا ڈرائی فروٹ ہے۔

اور غذائیت سے بھرپور ہے صرف سو گرام کاجو میں چھ سو ساٹھ پوٹاشیم موجود ہوتا ہے۔ کاجو ہیلتھی فیٹ سے بھرپور ہوتا ہےجو ہماری دل کی صحت کے لیے بھرپور ہوتا ہے۔ اور اس میں پروٹین بھی ہوتا ہے یہ ہمارے دماغ کی صحت کو بہترکرتا ہے۔ دماغی پرفارمنس کو بڑھاتا ہےا ور خ ون میں موجود شوگر کے لیول کو کنٹرول کرتا ہے۔ سنگترے: مالٹے میں وٹامن سی کا خزانہ ہوتا ہے۔ لیکن سو گرام مالٹے میں ایک سو اکیاسی ملی گرام پوٹاشیم بھی پایا جاتا ہے یہ پھل آپ کو جراثیموں سے محفوظ رکھتا ہے۔ بھرپور وٹامن سی کی وجہ سے یہ آپ کی جلد کو ہیلتھی ، چمکدار اور خوبصورت رکھتا ہے۔ یہ پھل آپ کی باڈی میں آئرن کو اچھی طرح سے جذ ب کرواتا ہے۔ خ ون کی کمی کے مریضوں کےلیے یہ بہت اچھا پھل ہے۔ اور موسمی سیزن میں ان کو بھرپور کھانا چاہیے۔ آلو: آلو غذائیت سے پھر بور ہوتے ہیں۔ لیکن فرائیڈ آلوؤںمیں سے ساری غذائیت نکل چکی ہوتی ہے۔ اس لیے آپ غذا کو اس باڈی کو زیادہ سے زیادہ فائدہ ہو۔ اگرآپ آلو کو چھلکے سمیت کھاتے ہیں۔ توان کی غذایت کئی گنا بڑھ جاتی ہے۔ ابلے ہوئےآلو کی سوگرام غذا میں پانچ سو پینتیس ملی گرام پوٹاشیم ہوتا ہے۔ آلو مختلف سبزیوں کے ساتھ ملا کر کھایا جاسکتا ہے۔

ایک ابلا ہوا آلو فائبرز سے بھرپور ہوتا ہے۔ اور ایک آلو میں مکمل کھانے کے کی غذائیت ہوتی ہے۔ اس لیے روزمرہ کی ڈائیٹ میں آلو کو ضرور کھایاکریں۔ خاص طور پر گروئینگ بچوں کو ضرور دیا کریں۔ مونگ پھلی : مونگ پھلی غذائیت سے بھرپور غذا ہے۔ جو موسم سرما کا شاندار تحفہ ہے صرف سو گرام مونگ پھلی میں سات سو پانچ ملی گرام پوٹاشیم ہوتا ہے جن کا وزن زیادہ ہو۔ یا پھر جو دل کے مریض ہوں۔ ان کے لیے یہ شاندار غذا ہے آپ تلی ہوئی اور نمکین مونگ پھلی کھانےسے گریز کریں۔ مونگ پھلی سے بنا مکھن یعنی پی نٹ بٹر آپ کے سینڈوچ کے لیے بہترین چیز ہے۔ مونگ پھلی میں پوٹاشیم کی اچھی خاصیت غذا ہوتی ہے۔ مشروم : مشروم بہت اچھی غذا ہے اس میں بھرپور مقدار میں غذائیت ہوتی ہے۔صرف سوگرام مشرومز میں تین سو اٹھارہ ملی گرام پوٹاشیم موجود ہوتا ہے۔ مشرومز میں منرلنز اور وٹامنز کا خزانہ موجود ہوتا ہے۔اوراس میں فائبرز کی اچھی خاصی مقدار ہوتی ہے۔ جو لوگ مشرومز کا باقاعدگی استعمال کرتے ہیں۔ وہ لو گ شوگر، کینسر، انزائمر جیسے دماغی بیماری سے محفوظ رہتےہیں۔ اور دل کی بیماریوں سے بھی بچے رہتے ہیں۔ کھانےسے پہلے چیک کرلیں کہ مشرومز سے آپ کو الرجی نہیں ہوتی۔ سویا بین : سویابین میں منرلنز اور وٹامنز کا خزانہ موجودہوتا ہے جیسا کہ کیلشیم ، فاسفورس، پوٹاشیم اور میگنیشیم سویا بین میں موجود پروٹین دوسری غذاؤں کی نسبت سب سے زیادہ ہوتی ہے۔ صرف سوگرام سویابین میں ایک سو اٹھارہ ملی گرام پوٹاشیم موجود ہوتا ہے۔ اس لیے سویا بین کا استعمال ضرور کرنا چاہیے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.